کاتالونیا کی برطرف حکومت کے ارکان، ہسپانوی عدالت میں

پناہ کی تلاش میں یورپ کا رخ کرنے والے پاکستانی تارکین وطن میں عام طور پر یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ دیگر یورپی ممالک کی نسبت اٹلی میں پاکستانی شہریوں کو پناہ ملنے کے امکانات زیادہ ہیں۔ اس تاثر کی حقیقت جانے کے لیے ڈی ڈبلیو نے اپنی اس خصوصی رپورٹ میں یورپی یونین کے دفتر شماریات ’یورو سٹیٹ‘ کے اعداد و شمار کا جائزہ لیا ہے۔
کن ممالک میں کتنے پاکستانیوں نے پناہ کی درخواستیں دیں؟
جنوری سن 2012 سے لے کر دسمبر سن 2016 تک کے اعداد و شمار کا جائزہ لیا جائے تو ان پانچ برسوں کے دوران ایک لاکھ ساٹھ ہزار سے زائد پاکستانی تارکین وطن نے یورپی یونین کے مختلف رکن ممالک میں حکام کو سیاسی پناہ کے حصول کے لیے درخواستیں جمع کرائیں۔
اٹلی: پناہ کے قوانین میں تبدیلی کا مجوزہ قانون
جرمنی سے مہاجرین کو ملک بدر کر کے یونان بھیجا جائے گا، یونان
مذکورہ عرصے کے دوران پاکستانی تارکین وطن نے سب سے زیادہ اٹلی ہی میں سیاسی پناہ کی درخواستیں جمع کرائیں۔ اٹلی میں ان پانچ برسوں کے دوران مجموعی طور پر 37 ہزار پاکستانی پناہ کی تلاش میں پہنچنے۔ سن 2012 میں اٹلی میں پناہ کے خواہش مند پاکستانیوں کی تعداد محض چھبیس سو تھی جو سن 2015 میں تین گنا سے زائد کے اضافے کے ساتھ دس ہزار تک جا پہنچی تھی جب کہ سن 2016 میں اطالوی حکام کو پناہ کی درخواست دینے والے پاکستانیوں کی تعداد قریب چودہ ہزار ہو گئی تھی۔